اسلام کا پیغام نفرت سے نہیں محبت سے پھیلے گا؛ آصف لقمان قاضی

 

سابق امیر جماعت اسلامی قاضی حسین احمد مرحوم کی شخصیت اور دینی و سماجی خدمات کے حوالے سے اہم قومی و عالمی شخصیات کے مضامین اور تحریروں پر مشتمل مجموعہ ”عزیز جہاں“ کی نیویارک میں تقریب رونمائی
 
 تقریب کا اہتمام نیویارک میں قاضی حسین احمد مرحوم کے دیرینہ عقیدت مند اور پاکستانی کمیونٹی کی معروف سیاسی و سماجی شخصیت شبیر گل اور اکنا ریلیف کے معاوذ صدیقی سمیت ان کے ساتھیوں نے کیا تھا


امام عبداللہ دانش، علامہ شہباز احمد چشتی ، علامہ سخاوت حسین سندرالوی ، طارق الرحمان شیلے، اما م ظفیر احمدکے علاوہ کمیونٹی کی اہم شخصیات اور امریکہ میں دینی و سیاسی قائدین نے بڑی تعداد میں شرکت کی


شرکاءنے سابق امیر جماعت اسلامی نے قاضی حسین احمد کی خدمات کو شاندار الفاظ می خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ پاکستان ہی نہیں بلکہ ملت اسلامیہ کے عظیم رہنما تھے جو کہ اپنی ذات میں انجمن تھے


کتاب ”عزیز جہاں “کی رونمائی کے موقع پر شرکاءنے بڑی تعداد میں کتاب خریدی اور آصف لقمان قاضی سے اس پر آٹو گراف بھی لئے ،قاضی حسین احمد ہمارے لئے محبتیں چھوڑ کر گئے ہیں ؛ آصف لقمان



نیویارک (خصوصی رپورٹ) سابق امیر جماعت اسلامی قاضی حسین احمد مرحوم کی شخصیت اور دینی و سماجی خدمات کے حوالے سے اہم قومی و عالمی شخصیات کے مضامین اور تحریروں پر مشتمل مجموعہ ”عزیز جہاں“ کی نیویارک میں تقریب رونمائی یہاں رائل بینکوئٹ ہال ، بروکلین میں منعقد ہوئی جس میں امریکہ کے دورے پر آئے قاضی حسین احمد مرحوم کے صاحبزادے آصف لقمان قاضی نے خصوصی شرکت کی ۔

 

اس تقریب کا اہتمام نیویارک میں قاضی حسین احمد مرحوم کے دیرینہ عقیدت مند اور پاکستانی امریکن کمیونٹی کی معروف سیاسی و سماجی شخصیت شبیر گل اور اکنا ریلیف کے معاوذ صدیقی سمیت ان کے ساتھیوں نے کیا تھا ۔

تقریب میں امام عبداللہ دانش، علامہ شہباز احمد چشتی ، علامہ سخاوت حسین سندرالوی ، طارق الرحمان شیلے، اما م ظفیر احمدکے علاوہ نیویارک کی پاکستانی امریکن کمیونٹی کی مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات اور امریکہ میں مختلف اہم سیاسی جماعتوں کے چیپٹرز کے قائدین اور کمیونٹی ارکان نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔ ان تمام شخصیات بالخصوص سیاسی قائدین جن کے ماضی یاحال میں ، جماعت اسلامی سے نظریاتی اختلافات بھی ہیں، نے قاضی حسین احمد کی خدمات کو شاندار الفاظ می خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ پاکستان ہی نہیں بلکہ ملت اسلامیہ کے عظیم رہنما تھے جو کہ اپنی ذات میں انجمن تھے ۔


کتاب ”عزیز جہاں “کی رونمائی کے موقع پر شرکاءنے بڑی تعداد میں کتاب خریدی اور آصف لقمان قاضی سے اس پر آٹو گراف بھی لئے ۔ قاضی حسین احمد مرحوم کی یاد میں ہونیوالی اس تقریب کے انعقاد میں رائل بینکوئٹ ہال کے چیف ایگزیکٹو میاں فیاض نے خصوصی تعاون کیا ۔ تقریب میں تلاوت قران پاک کی سعادت سردار امتیاز گڑالوی جبکہ نعت رسول ﷺ مقبول پڑھنے کی سعادت سجاد احمد بٹ نے حاصل کی۔


آصف لقمان قاضی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ میں جو محبت اور شفقت کمیونٹی سے مجھے ملی ہے، بس یہی محبتیں قاضی حسین احمد مرحوم ہماے لئے چھوڑ کر گئے ہیں ۔تقریب سے اے این پی امریکہ کے اقبال علی خان، مسلم لیگ (ن) امریکہ کے صدر روحیل ڈار، تحریک انصاف نیویارک کے یاسر علی ، کشمیری رہنما سردار سوار خان، پاکستانی امریکن وکلاءبرائے حقوق کے رانا رمضان، پیپلز پارٹی امریکہ کے خالد اعوان،پاکستان عوامی تحریک کے شیخ ارشاد ، سنی سکالرز بورڈ امریکہ کے چئیرمین علامہ شہباز احمد چشتی ، باتھ ایونیو مسجد کے امام عبداللہ دانش، اکنا ریلیف کے معاوذ صدیقی ، جیو جنگ گروپ کے عظیم ایم میاں، پاکستانی امریکن سوسائٹی کے شمس الزمان ، ڈائیلاگ فورم کے طاہر خان ، پاکستانی امریکن کمیونٹی آف نیویارک کے طاہر میاں، اکنا مرکز کے امام ظفیر علی، پنجاب یونیورسٹی کے سابق سٹوڈنٹ لیڈر طیب شاہین، پاکستانی امریکن کمیونٹی آف برونکس کے چئیرمین چوہدری افضل گلبہارسمیت دیگر نے خطاب کیا ۔


آصف لقمان قاضی نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ ہم نے دیکھا کوئی کسی بھی مکتب فکر سے تعلق رکھتا ہو۔ کوئی بھی خیالات رکھتا ہو،کسی مذہب کسی بھی دین سے تعلق ہو، چاہئے وہ چھوٹاہوں یا بڑا ہو، مالی لحاظ سے اس کا سوشل سٹیٹس کیسا بھی ہو،ہم نے دیکھا کہ قاضی حسین احمد ہر ایک کے ساتھ محبت اور احترام سے پیش آتے تھے۔ ان کے پاس کوئی بچہ بھی ملنے آیا تو وہ اس سے بڑے احترام سے ملے اور کھڑے ہو کر بچے کا استقبال کیا۔ وہ ہر انسان کے ساتھ بلا امتیاز محبت بلا امتیاز احترام ¾ اور صرف مسلمانوں کے ساتھ ہی نہیں بلکہ غیر مسلموں کے ساتھ یہی وجہ ہے کہ ان کہ چاہنے والوں میں بڑے تعداد میں مسلمانوں موجود تھے ۔ حتیٰ کہ ان کے جنازے میں بھی نوشہرہ میں ہندواور سکھ برادری تک کے لوگ شریک ہوئے اور انہوں نے ان کے سفر آخر ت کے موقع پر ان کی محبت اور خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔


آصف لقمان قاضی نے مزید کہا کہ قاضی صاحب نے سب سے اپنے اپنے طور پر محبت کا اظہار کیا جس کے جواب میں ہمیں محبت ملتی ہے ۔ قاضی صاحب ہمارے لئے اپنی محبتیں چھوڑ کر گئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہمارا تعلق مختلف سیاسی جماعتوں سے ہو سکتا ہے۔ ہمارا تعلق مختلف مذہبی مکاتب فکر سے ہو سکتا ہے، مختلف نظریات سے ہو سکتا ہے لیکن بحیثیت مسلمان جو ہماری بنیادی شناخت ہے۔ وہ یہ ہے کہ ہم سب حضورﷺ کے پیرو کار ہیں اور امت اگر متحد ہو سکتی ہے تو حضورﷺ کی شخصیت پر ہوسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ قاضی صاحب نے ہمیشہ مسلمانوں میں اتحاد کی کوشش کی۔ جماعت اسلامی کی قیادت سے فارغ ہونے کے بعد انہوں نے اپنی جماعت کے لوگوں سے درخواست کی کہ اب کیونکہ میں جماعت کا امیر نہیں ہوں بس آپ مجھے اتنی اجازت دیں کے میں قومی سطح پر بغیر کسی جماعت کی وابستگی کے اور بحیثیت پاکستانی لوگوں کو اکٹھا کر سکوں۔ انہوں نے اسلام آباد میں ایک ادارہ فکرو عمل بنایا ۔ جس کے تحت یہ کتاب”عزیز جہاں“ شائع ہوئی ہے ۔ اس پلیٹ فارم پر قاضی حسین احمد نے سیمنار اور کانفرنسز کا اہتمام کرنا شروع کیا۔انہوں نے آخری سانس تک امت میں اتحاد و یکجہتی کے لئے اپنا کردار ادا کیا ۔


آصف لقمان قاضی نے مزید کہا کہ امریکہ سمیت دنیا بھر میں بسنے والی پاکستانی و مسلم امریکن کمیونٹی کو اپنے قول و فعل سے دین اسلام اور اسلامی تعلیمات کا علمبردار بننا چاہئیے اور خود کو دوسروں کے سامنے ایک عملی نمونہ کے طور پر پیش کرنا چاہئیے ۔ یہ ہماری ہی کامیابی کا راز نہیں بنے گا بلکہ دین کی خدمت کا ایک ذریعہ بھی بنے گا۔انہوں نے کہا کہ اسلام کسی جغرافیہ کا پابند نہیں ہے اور اسلام کا پیغام پوری انسانیت کے لئے ہے۔ آصف قاضی نے کہا کہ امریکہ میں موجود کمیونٹی ارکان معاشرے کا ایک مثبت رکن بنیں اور ایسے کام کریں گے کہ جس سے اللہ تعالیٰ کی مخلوق کی خدمت اور بہتری ہو ۔ آپ کے ان کاموں کی وجہ سے یہاں کی عوام آپ سے خوش ہونگے اور آپ کے قریب ہونگے اور وہ آپ کو اسلام کا ایک سچا سفیر اور عمدہ انسان پائیں گے


آصگ قاضی نے کہا کہ ایک بات ہمیشہ یاد رکھیں کہ اسلام کا پیغام نفرت سے نہیں بلکہ صرف محبت سے پہنچایا جا سکتا ہے ۔آخر میں آصف لقمان قاضی نے شرکاءسے اپیل کی کہ وہ اپنے والدین کے لئے دعا کرتے وقت قاضی حسین احمدمرحوم کو بھی اپنی دعاو¿ں میںیاد رکھیں ۔


تقریب سے خطاب کے دوران تمام مقررین نے قاضی حسین احمدمرحوم کی دینی ، سیاسی و سماجی خدمات کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ قاضی حسین احمد نے جماعت کی سیاست کو نیا رنگ دیا، اسے متحرک اور ولولہ انگیر بنانا، قومی سیاست میں اصولوں کی سیاست کی روشن مثالیں قائم کیں اور شاندار روایات قائم کیں ۔ ان کی پاکستانی قوم میں اتحاد بین المسلمین کے حوالے سے خدمات کو آگے بڑھانے اور ان کی جانب سے قائم کردہ روایات کو برقرار رکھنے کی آج بہت ضرورت ہے۔


شبیر گل نے تمام شرکاءکا شکرئیہ اداکرتے ہوئے کہا کہ ان کے لئے قاضی حسین احمد کی زندگی میںان کی خدمت بڑے اعزاز کی بات تھی اور اب وہ عہد کرتے ہیں کہ وہ قاضی حسین احمد مرحوم ؒ کی خدمات کو عام کریں گے اور ان کی روایات کوفروغ دیں گے ۔ انہوں نے شرکاءسے کہا کہ وہ زیادہ سے زیادہ تعداد میں عزیز جہاں خرید کر قاضی حسین احمد کی شخصیت اور خدمات کے حوالے سے عالمی و قومی شخصیات کی آراءکو عام کریں

تاریخ اشاعت : 2014-04-23 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock