پاکستان میں قتل کئے جانیوالے ڈاکٹر مہدی قمر ٹورنٹو میں سپرد خاک

جماعت احمدئیہ سے تعلق رکھنے والے ڈاکٹر قمر امریکہ میں مقیم تھے ۔ وہ پاکستان طاہر انسٹیٹیویٹ آف کارڈیالوجی میں رضاکارانہ خدمات سر انجام دینے کے لئے پاکستان گئے تھے



 

ٹورنٹو(مسعود کمبوہ سے)جماعت احمدئیہ سے تعلق رکھنے والے پاکستانی امریکن ڈاکٹر مہدی قمرجن کو 24مئی کو ربوہ میں قبرستان کے قریب گولی مار کر قتل کر دیا گیا تھا، کا جسد خاکی کینیڈا کے شہر ٹورنٹو لایا گیا جہاں ان کی نماز جنازہ ٹورنٹو کے علاقے پیس ولج کے جماعت خانہ جامعہ اسلام میں ادا کی گئی ۔ ڈاکٹر مہدی قمر کی نماز جنازہ امیر جماعت احمدئیہ لال خان ملک نے ادا کی ۔ نماز جنازہ میںپاکستانی امریکن اور پاکستانی کینیڈین کمیونٹی کے ارکان کی بڑی تعداد کے علاوہ ، پاکستان قونصل خانہ کے عمران اورکینیڈا کے مقامی منتخب ارکان و حکام نے شرکت کی ۔


ڈاکٹر مہدی قمر کی میت جب ٹورنٹو پہنچی تو اسے کینیڈین حکام نے سرکاری طور پر وصول کیا۔ مقتول امریکی و کینیڈین دونوں شہریت کے حامل تھے ۔ ان کے تابوت کو بھی امریکی اور کینیڈین جھنڈوں میں لپیٹا گیا تھا۔

 

مقتول کے بھائی کینیڈا میں رہتے ہیں جبکہ ڈاکٹر قمر امریکہ میں مقیم تھے ۔ وہ پاکستان طاہر انسٹیٹیویٹ آف کارڈیالوجی میں رضاکارانہ خدمات سر انجام دینے کے لئے پاکستان گئے تھے جہاں انہیں نا معلوم افراد نے گولی مار کر قتل کر دیا ۔ ڈاکٹر مہدی قمر کو ٹورنٹو میں سپرد خاک کیا گیا۔ کمیونٹی نے ان کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کے قاتلوں کو فوری گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دی جائے ۔

تاریخ اشاعت : 2014-06-04 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock