اردو مرکز کی سلور جوبلی؛ رئیس وارثی اورساتھیوںکی خدمات کو شاندار الفاظ میں خراج تحسین

 


نیو یارک(خصوصی رپورٹ)شمالی امریکا کے معروف ادبی ادارے اردو مرکز نیو یارک کے قیام کے پچیس برس مکمل ہونے پر سلور جوبلی تقریبات کا سلسلہ جاری ہے۔ اسی حوالے سے خصوصی تقریب کا اہتمام کیا گیا۔ تقریب کی صدارت سینئر صحافی عظیم ایم میاں نے کی۔ مہمان خصوصی قونصل جنرل ٓف پاکستان راجہ علی اعجاز تھے ممتاز ٹی وی اینکر اور دانشور فائق صدیقی کلیدی مقرر تھے۔ محترمہ نیلو فر عباسی نے نظامت کے فرائض انجام دئیے۔ اردو مرکز کے ناظم اعلیٰ نصیر وارثی نے خطبہ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے تمام شعرائے کرام، مقررین، معاونین، مشتہرین اور دیگر شرکائے محفل اور خاص طور پر صحافیوں کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ اردو زبان کی ترقی ترویج اور فروغ کے لئے اجتماعی جدوجہد کی ضرورت ہے یہ ہم سب کی قومی زبان اور ثقافتی ورثہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اردو زبان دنیا بھر میں بولی اور سمجھی جانے والی زبانوں میں تیسرے درجے پر ہے۔ اس موقع پر عظیم ایم میاں نے اپنے صدارتی خطاب میں کہا ادو زبان کی ترقی و ترویج کے لیے اردو مرکز نیو یارک کی خدمات اور جدوجہد مثالی ہے انہوں نے کہا میں نے اردو مرکز کے قیام کے ابتدائی دنوں سے آج تک اس ادارے کے تمام اراکین اور خاص طور پر اس کے بانی صدر رئیس وارثی کو انتہائی فعال اور اپنے مقاصد کے حصول کے لیے سر گرم عمل پایا ہے۔ تقریب کے مہمان خصوصی قونصل جنرل آف پاکستان محترم راجہ علی اعجاز نے کہا میں اردو مرکز نیو یارک کی طویل عرصے پر محیط فروغ اردو کی قابل فخر جدوجہد کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں انہوں نے کہا کی اردو ہماری قومی زبان اور قومی ورثہ ہے اس کے تحفظ اور فروغ کے لیے ہم سب کو اپنا کردار ادا کرنا چاہئے آج کی یہ پروقار تقریب اس حوالے سے مثالی حیثیت کی حامل ہے۔ انہوں نے اردو مرکز کے صدر رئیس وارثی اور دیگر عہدیداروں کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے شاندار سلور جوبلی تقریب کے انعقاد پر مبارک باد پیش کی۔ اردو مرکز کے صدر رئیس وارثی نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان کے بانی قائد اعظم محمد علی جناح نے ۲۱ مارچ ۱۹۴۸کو ڈھاکہ میں عوام سے خطاب میں فرمایا تھا کہ پاکستان کی سر کاری زبان صرف اور صرف اردو ہو گی۔

 

 

 

اردو مرکز کے بانی صدر رئیس وارثی نے اردو مرکز نیو یارک کی جانب سے ایک تاریخی قرار داد پیش کرتے ہوئے کہا کہ قائد اعظم کے اس بیان کی روشنی میںصدر پاکستان محترم ممنون حسین،وزیر اعظم پاکستان جناب میاں محمد نواز شریف اور دیگر حکام سے درخواست ہے کہ ۱۲ مارچ کا دن سرکاری طور پر یوم اردو کے طور پر منایا جائے حاضرین نے اس قرار داد کی بھر پور حمایت کی۔ اس موقع پر قونصل جنرل نے اردو مرکز نیو یارک کی یہ قرار داد اعلیٰ حکام تک پہنچانے کا وعدہ کیا۔ تقریب کے کلیدی مقرر ممتاز ٹی وی اینکر فائق صدیقی نے کہا کہ رئیس وارثی نے دیار غیر میں نو جوانی کے دور سے ہی اردو زبان کی ترقی اور ترویج کے لئے عملی طور پر جدوجہد کا آغاز کیا یہ کام اکثر لوگ بڑھاپے میں شروع کرتے ہیں انہوں نے کہا اقوام متحدہ میں پہلی اردو اہل قلم عالمی کانفرنس ان کا ایک تاریخی کارنامہ ہے۔ انہوں نے کہا ہم سب کو رئیس وارثی کا ساتھ دینا چاہئے۔ ممتاز اسکالر اور سماجی رہنما حافظ محمد اسلم نے تلاوت کلام پاک تے تقریب کا آغاز جس کے بعد شہدائے پشاور کے لئے فاتحہ خوانی اور ایصال ثواب کے لئے خصوصی دعا کرائی گئی نعت رسول کی سعادت جناب نایاب رضوی نے حاصل کی۔تقریب کے دوسرے حصے میں محفل مشاعرہ منعقد ہوئی جس کی صدارت پاکستان کے مہمان شاعر قسیم امروہوی نے کی مہمان خصوصی سعودی عرب سے آئے ہوئے شاعر سہیل ثاقب تھے جبکہ بھارت کے معروف شاعر آغا سروش تھے۔ مشاعرہ کمیٹی کے صدر معروف شاعر فرحت ندیم ہمایوں نے نظامت کے فرائض انجام دئیے۔ اس مشاعرے میں معاذ صدیقی، شبیر جان، تقی کمال، محفوظ حیدری، محترمہ رخشندہ، الطاف ترمذی، سعید نقوی، جمیل عثمان، صفوت علی صفوت، شوکت فہمی، حسنین رضا، محمد ادریس، نایاب رضوی،نگہت فاطمہ، رئیس وارثی، فرحت ندیم ہمایوں، آغا سروش، سہیل ثاقب اور صدر مشاعرہ قسیم امروہوی نے اپنا کلام سنایا ، مامون ایمن اور حمیرا رحمان نے بھی تقریب میں شرکت کی۔ اس موقع پر اردو مرکز کی جانب سے تمام مہمانوں میں خصوصی تحائف بھی تقسیم کئے گئے اور پر تکلف عشائیہ کا بھی اہتمام کیا گیا۔

 

تاریخ اشاعت : 2014-12-24 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock