صرف ایک بار ضرور معلوم کریں کہ میت کو پاکستان بھیجنے سے پہلے فیونرل ہوم میں کیا جاتا ہے ؛لقمان الٰہی کی فیونرل کمیٹی کو بریفنگ

پاک فیونرل ہوم کے ڈائریکٹر لقمان الٰہی نے علامہ اقبال کمیونٹی سنٹر کے ارکان کو فیونرل کے بارے میں بریفنگ دی ، میٹنگ میں کمیونٹی سنٹر کے ارکان کی بڑی تعداد میں شرکت


 انٹر نیشنل ائیرلائینز کے تقاضوں کے مطابق اس کی (اِمبامنگ،embaming)ضروری ہے جس میں میت کے جسم کے اندر تمام خون اور فاسق مادے نکال دئیے جاتے ہیں


یہ تمام عمل اس لئے کیا جاتا ہے تاکہ میت ”ڈی کمپوز“ (decompose)نہ ہو۔انہوں نے کہا کہ لہٰذا جو لوگ اپنے عزیز و اقارب کو پاکستان بھجواتے ہیں ، انہیں
 جیوئش(یہودی) کمیونٹی کے ارکان بھی اپنے فون ہونے والے ارکان کی باڈی کو اسرائیل بھجواتے ہیں تاہم ان کے ہاں ”باڈی “ کی ”امبامنگ“ نہیں کی جا تی
کیونکہ ان کے ہاں ائیرلائیز اور ان کے ملک کا تقاضہ نہیں ہے کہ باڈی کی امبامنگ ہو تاہم وہ اپنے فون ہونے والے کمیونٹی ارکان کی باڈی کو ”ڈرائی آئس “(اور جیل آئس) میں پیک کرکے بھجواتے ہیں


 اعلیٰ حکام کے ساتھ یہ معاملہ اٹھایا جائیگا کہ وہ بھی ”امبانگ “ کی بجائے ”ڈرائی آئس (اور جیل آئس) “ میں پیک میت کو پاکستان بھجوانے کےلئے گنجائش پیدا کریں؛ علامہ اقبال کمیونٹی سنٹر



 

نیویارک (خصوصی رپورٹ ، تصاویر ؛ تسنیم شہزاد) علامہ اقبال کمیونٹی سنٹر کے زیر اہتمام فیونرل کمیٹی کا اہم اجلاس گذشتہ ہفتے یہاں گورمے پارٹی ہال میں منعقد ہوا جس میں چئیرمین ناصر اعوان، سیکرٹری جنرل شمس زمان اور فیونرل کمیٹی کے انچارج چوہدری جاوید چیچی سمیت کمیونٹی سنٹر کے اہم ارکان نے شرکت کی ۔ اس اجلاس میں نیویارک کے مسلم امریکن فیونرل ہوم ، پاک فیونرل ہوم کے ڈائریکٹر لقمان الٰہی نے خصوصی طور پر شرکت کی اور انہوں نے کمیونٹی سنٹر کے ارکان کو فیونرل ہوم میں میت کے فیونرل کے انتظامات اور اقدامات کے بارے میں اہم بریفنگ دی ۔

 

لقمان الٰہی نے بتایا کہ جس میت کو پاکستان سمیت بیرون ممالک میں بھیجا جاتا ہے ، انٹر نیشنل ائیرلائینز کے تقاضوں کے مطابق اس کی (اِمبامنگ،embaming)ضروری ہے جس میں میت کے جسم کے اندر تمام خون اور فاسق مادے نکال دئیے جاتے ہیں اور اسی طرح میت کے آنتوں سمیت معدے میں موجود بعض اعضاءکو ”کرش“ کر دیا جاتا ہے ۔یہ تمام عمل اس لئے کیا جاتا ہے تاکہ میت ”ڈی کمپوز“ (decompose)نہ ہو۔انہوں نے کہا کہ لہٰذا جو لوگ اپنے عزیز و اقارب کو پاکستان بھجواتے ہیں ، انہیں فیونرل ہوم میں پورے کئے جانے والے تقاضوں کے بارے میں علم ہونا ضروری ہے تاہم اگر میت کو نیویارک سمیت امریکہ میں سپرد خاک کیا جائے تو اس کے لئے باڈی کی ”امبامنگ“ کرنا ضروری نہیں ہے ۔

 

لقمان الٰہی نے مزید بتایا کہ جیوئش(یہودی) کمیونٹی کے ارکان بھی اپنے فون ہونے والے ارکان کی باڈی کو اسرائیل بھجواتے ہیں تاہم ان کے ہاں ”باڈی “ کی ”امبامنگ“ نہیں کی جا تی کیونکہ ان کے ہاں ائیرلائیز اور ان کے ملک کا تقاضہ نہیں ہے کہ باڈی کی امبامنگ ہو تاہم وہ اپنے فون ہونے والے کمیونٹی ارکان کی باڈی کو ”ڈرائی آئس “(اور جیل آئس) میں پیک کرکے بھجواتے ہیں تاکہ باڈی ڈی کمپوز نہ ہو۔

 

لقمان الٰہی نے کہا کہ اگر پاکستانی کمیونٹی اپنے ملک اور اپنے ملک کے ائیر لائینز کے قوانین میں یہ گنجائش پیدا کروالیں کہ باڈی کی امبامنگ کی بجائے اسے ڈرائی آئس میں پیک کرکے بھی اوورسیز شپ کیا جاسکتا ہے تو میت کو امبامنگ کے بغیر بھی بھجوایا جاتا ہے ۔ لقمان الٰہی نے مزید بتایا کہ نیویارک ، نیوجرسی کے ایریا میں ایک میت کی فیونرل ہوم کے اخراجات کے علاوہ تدفین پر ساڑھے سات سو سے لیکر پانچ ہزار یا پانچ ہزار سے لیکر دس بارہ ہزار تک کے اخراجات آتے ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ ہر شخص کو موت کا ذائقہ چکھنا ہے لہٰذا کمیونٹی میں فیونرل کے انتظامات کو بروقت نہیں بلکہ وقت سے پہلے یقینی بنانا چاہئیے ۔

 


علامہ اقبال کمیونٹی سنٹر کے اس اجلاس میں شرکاءنے فیونرل کمیٹی کے انتظامات ، پالیسیاں اور دستیاب فنڈز کا جائزہ لیا اور یہ فیصلہ کیا کہ کمیونٹی میں فیونرل کے بارے میں اہم معلومات کے بارے میں آگاہی پیدا کرنے کے لئے اقدام کئے جائیں گے ۔ انہوںنے کہا کہ پاکستان کے اہم فیصلہ سازوں اور حکمران شخصیات سمیت پی آئی اے کے اعلیٰ حکام کے ساتھ یہ معاملہ اٹھایا جائیگا کہ وہ بھی ”امبانگ “ کی بجائے
 ”ڈرائی آئس (اور جیل آئس) “ میں پیک میت کو پاکستان بھجوانے کےلئے گنجائش پیدا کریں تاکہ وہ کمیونٹی ارکان کہ جو اپنے عزیز و اقارب کو وطن عزیز پاکستان میں سپرد خاک کرنا چاہتے ہیں ، وہ ان کی میت کو پاکستان بھجوا سکیں ۔


ناصر اعوان نے کہا کہ کمیونٹی ارکان ، علامہ اقبال کمیونٹی سنٹر کی فیونرل کمیٹی کے بارے میں معلومات حاصل کریں اور اس کی رکنیت حاصل کریں ۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک ایسا کام ہے کہ جس کی ایک نہ ایک دن سب کو ضرورت پڑنی ہے اور جب یہ ضرورت پڑے گی ، اس وقت ضرورت مند اپنے لئے کچھ نہیں کر سکتا تاہم وہ اپنی زندگی میں اہم اقدام کرسکتا ہے ۔ اس سلسلے میں فیونرل کمیٹی اپنا ایک کردار ادا کررہی ہے ۔

تاریخ اشاعت : 2013-11-12 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock