الاباما سینٹ الیکشن میں ڈیموکریٹک امیدوار ڈگ جونز فاتح، صدر ٹرمپ کوبڑا سیٹ بیک،نتائج قبول نہیں ، الاباما سٹیٹ کے انتخابی قواعد کے مطابق اگر انتخابی نتائج میں آدھ فیصد کا فرق ہو تو ووٹوں کی گنتی دوبارہ ہونا لازم ہے ، الاباما سینٹ کے ریپبلکن امیدوار رے مور کا اعلان  

 

الاباما (خصوصی رپورٹ) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور برسر اقتدار ریپبلکن پارٹی کو 12دسمبر کو اس وقت ایک بڑا سیٹ بیک اور جھٹکا پہنچا کہ جب الاباما ریاست میں یو ایس سینٹ کے الیکشن میں ڈیموکریٹ پارٹی کے امیدوار ڈگ جونز نے ریپبلکن حریف رے مور کو ڈرامائی انداز میں شکست دے دی۔

 

اس الیکشن کی دوسری سب سے اہم بات یہ ہے کہ ڈیموکریٹ پارٹی نے روایتی طور پر قدامت پسند ریاست الاباما میں پچیس سال کے بعد پہلی بار کامیابی حاصل کی ۔سیاسی تجزئیہ نگار الاباما سینٹ الیکشن میں لبرل ڈیموکریٹ ڈگ جونز کی کامیابی کو امریکی سیاست میں اہم تبدیلی قرار دے رہے ہیں ۔ واضح رہے کہ ریپبلکن پارٹی کے امیدوار و سابق جج رے مور پر ماضی میں کم عمر خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے الزام رہا اور ایسے الزامات کا ان کو اپنی پوری انتخابی مہم میں سامنا رہا۔ اس تمام تر صورتحال کے باوجود صدر ٹرمپ نے الیکشن سے چند روز قبل اپنی پارٹی کے امیدوار رے مور کی حمایت کی اور ووٹرز پر زور دیا کہ وہ منگل کو انہیں ووٹ دیں لیکن الاباما کے ووٹرز کی اکثریت نے رے مور کو مسترد کرتے ہوئے ڈگ جونز کو کامیاب کیا ۔

 

الاباما میں یو ایس سینٹ کے الیکشن کی کامیابی سے اب سینٹ میں ریپبلکن پارٹی کی اکثریت میں ایک اور ووٹ کی کمی ہو گئی ہے اور نئی پارٹی پوزیشن کے مطابق ریپبلکن پارٹی کے 51جبکہ ڈیموکریٹ پارٹی کے 49سینیٹرز ہیں ۔

تاریخ اشاعت : 2017-12-12 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock