کیپٹن شاہین بٹ اوورسیز پاکستانی کمیشن کے وائس چئیرمین مقرر

 

لاہور (بابر ظہیر سے ) پاکستانی امریکن کمیونٹی کی معروف سیاسی و سماجی شخصیت ، شریف فیملی کے قریبی ساتھی کیپٹن (ر) خالد شاہین بٹ کو اوورسیز پاکستانی کمیشن کا وائس چئیرمین مقرر کر دیا گیا ہے ۔ اس کمیشن کے سرراہ و چئیرمین وزیر اعلیٰ میاں شہباز شریف ہوں گے اور کمشنر افضال بھٹی کو مقرر کیا گیا ہے

کمیشن میں وائس چئیرمین بھرپور اختیارات کے حامل ہوں گے ۔ سوموار کو میاں شہباز شریف کی صدارت میں کمیشن کا پہلا افتتاحی اجلاس منعقد ہوا جس میں کمیشن کے طریقہ کار اور لائحہ عمل کے بارے میں اہم فیصلے کئے گئے ۔ ان فیصلوں میں ایک اہم فیصلہ صوبے کے تمام اضلاع میں خصوصی کمیٹیوں کے قیام کا بھی فیصلہ ہے جس کے ارکان مقامی ضلعی پولیس و انتظامیہ حکام بھی ہوں گے ۔

میاں شہباز شریف نے کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانی کمیشن اوورسیز میں بسنے والے پاکستانیوں کے مسائل کے حل میں کلیدی و اہم کردار ادا کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ اوورسیز پاکستانی ملک و قوم کا سرمائیہ ہیں اور ان کے مسائل کے حل کے سلسلے میں حکومت کوئی کسر اٹھا نہیں رکھے گی

 

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ حکومت پنجاب نے اوورسیز پاکستانیز شکایات کمیشن باقاعدہ طور پر کچھ عرصہ قبل باقاعدہ قانون سازی کے ذریعہ قائم کیا ۔ یہ اوورسیز پاکستانیز کمیشن تارکین وطن کے مسائل کو سنے گا اور اس پر فوری طور پر کارروائی کرے گا۔

 

 اس کے چیئرمین وزیراعلیٰ پنجاب ہوں گے، کمیشن کے ارکان میں تین ارکان پنجاب اسمبلی اور دو  خواتینشامل کی گئی ہیں۔ حکومت پنجاب کے چیف سیکریٹری، سینئر ممبر ریونیو بورڈ، محکمہ داخلہ کے سیکریٹری اور سرمایہ کاری بورڈ کے چیئرمین بھی اس کمیشن کے ارکان ہوں گے۔

 

کمیشن کا کام یہ ہوگا کہ اوورسیز پاکستانیوں کی مختلف محکموں کے خلاف شکایات وصول کرے اور اس شکایت پر کارروائی کے لیے اسے متعلقہ محکمے کو بھیجے۔ اس کے علاوہ یہ کمشنر اوورسیز پاکستانیوں کی مشاورتی کونسل کی سفارشات پر پنجاب اور وفاق حکومت کی پالیسی میں تبدیلی یا بہتری کے لیے سفارشات بھی مرتب کرے گا۔

 

کمشنر اپنی کارکردگی کی سالانہ رپورٹ بھی مرتب کرے گا۔ وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف نے یہ کمیشن تقریباً دو ماہ قبل لاہور میں اوورسیز پاکستانیوں کی ایک کانفرنس میں قائم کرنے کا اعلان کیا تھا۔

 

اوورسیز پاکستانیوں کو سب سے بڑی شکایت یہ ہے کہ پاکستان میں ان کی زمینوں اور جائیدادوں پر قبضے ہوجاتے ہیں۔ بعض اوقات انہیں اغوا برائے تاوان کے لیے اغوا کرلیا جاتا ہے۔ کئی پاکستانیوں کو قتل بھی کردیا جاتا ہے۔ علاوہ ازیں امریکہ ، یورپ، مڈل ایسٹ اور برطانیہ سے جانے والے پاکستانیوں کے ساتھ ایئر پورٹس پر ناروا سلوک کیا جاتا ہے اور انہیں راستے میں لوٹ بھی لیا جاتا ہے۔

تاریخ اشاعت : 2015-01-06 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock