کراچی کا مسلہ اور حل ؟پاکستانی امریکن تھنک ٹنک کے زیر اہتمام نیویارک میں مجلس مذاکرہ

پاکستانی امریکن تھنک ٹنک کے زیر اہتمام نیویارک میںمجلس مذاکرہ ، کمیونٹی کی اہم شخصیات کی شرکت، کراچی کے مسلہ کے مختلف پہلوو¿ں پر اظہار خیال اور حل تجویز کئے گئے


کراچی سمیت پاکستان کے ہر مسلہ کا حل پاکستان زندہ آباد کی پالیسی پر عمل پیرا ہونے میں ہے ۔ ہم میں سے ہر ایک کو پاکستان زند ہ آباد کو اپنی اول و آخر ترجیح بنانی ہے اور سبز ہلالی پرچم کو سربلند کرنا ہے


بعض مقررین کی جانب سے الطاف حسین کی حالیہ سیاست کی مذمت کی گئی تاہم بعض مقررین کی جانب سے کہا گیا کہ پاکستان میں قانون سب کے لئے یکساں ہونا چاہئیے


نیویارک (خصوصی رپورٹ) پاکستانی امریکن کمیونٹی نیویارک کی فکری تنظیم پاکستانی امریکن تھنک ٹنک کے زیر اہتمام پاکستان کے معاشی مرکز ، سب سے بڑے شہر کراچی کی موجودہ صورتحال بالخصوص کراچی کے شہریوں کی اہم و نمائندہ تنظیم ایم کیو ایم اور اس کے بانی الطاف حسین کے موجودہ معاملات کا جائزہ لینے کے لئے ایک خصوصی مجلس مذاکرہ یہاں منعقد ہوئی جس میں کمیونٹی کی مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات ، دانشوروں اور سماجی و سیاسی شخصیت نے مسلہ کے مختلف پہلوو¿ں کا جائزہ لیا اور اس کے حل تجویز کئے ۔


تھنک ٹنک کے پریذیڈنٹ راجہ رزاق پوران کی صدارت میں منعقدہ اس اجلاس کی نظامت کے فرائض سلیم احمد ملک نے ادا کئے جبکہ مجلس میں بشیر قمر نے بطور کلیدی مقرر، انیس صدیقی نے بطور مہمان اعزاز ی شرکت کی ۔ دیگر شرکاءمیں میاں شبیر احمد بھلی، فریدہ خان ،چوہدری خورشید احمد بھلی ، خالد خا ن،مشیر عالم ، طالب حسین ،فیاض خان ، معوذ صدیقی (دنیا ٹی وی ) ، اشرف اعظمی ، شاہد کامریڈ، فائق صدیقی ،کرنل (ر) مقبول ملک ، کامل احمر،ڈاکٹر شفیق ،سعدئیہ تقی ، وسیم سید، اسلم بیگ ، سہیل شیخ، ملک اقبال اعوان، پرویز اقبال سمیت مقامی کمیونٹی ارکان نے شرکت کی ۔

 

تین گھنٹے سے زائد وقت تک جاری رہنے والی اس مجلس مذاکرہ میں کراچی ، ایم کیو ایم اور الطاف حسین کے معاملات پر مختلف آراءکا اظہار کیا گیا تاہم اجلاس کے شرکاءکی جانب سے پاکستان مردہ آباد نعرہ لگانا اور انڈیا اور اسرائیل سے مدد جیسے بیانات کی مذمت کرتے ہوئے اسے افسوسناک قرار دیا گیا ۔مقررین نے اس بات پر زور دیا کہ کراچی سمیت پاکستان کے ہر مسلہ کا حل پاکستان زندہ آباد کی پالیسی پر عمل پیرا ہونے میں ہے ۔

 

انہو ں نے کہا کہ ہم میں سے ہر ایک کو پاکستان زند ہ آباد کو اپنی اول و آخر ترجیح بنانی ہے اور سبز ہلالی پرچم کو سربلند کرنے میں اپنا کردار ادا کرنا ہے ۔بعض مقررین کی جانب سے الطاف حسین کی حالیہ سیاست کی مذمت کی گئی تاہم بعض مقررین کی جانب سے کہا گیا کہ پاکستان میں قانون سب کے لئے یکساں ہونا چاہئیے ۔ انہوں نے کہا کہ مسلہ کے حل کے لئے ضروری ہے کہ اس بنیاد کو دور کیا جائے کہ جس کی وجہ سے عوام مسائل کا شکار ہوتے ہیں ۔

 

مقرری نے کہا کہ پاکستان ہمارا وطن ہے ، وطن ماں کی طرح ہوتا ہے ۔ ماں کبھی غلط نہیں ہو سکتی ،وہ ہمیشہ اولاد کی خیر خواہ ہوتی ہے ، مادر وطن نے ہمیں سب کچھ دیا ، اب ہمیں اپنا فرض ادا کرنا ہوگا ۔
 

تاریخ اشاعت : 2016-09-01 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock