امریکہ میں 2040میں اسلام دوسرا بڑا مذہب بن جائیگا

مسلمانوں کی آبادی میں تیزی سے ہوتے اضافے کودیکھا جائے تو 2040مسلمان ،عیسائیوں کے بعدیہودیوں کی جگہ امریکہ کا دوسرا بڑا مذہبی گروپ بن جائیں گے،پیوریسرچ سینٹر

اندازوں کے مطابق2050تک امریکی مسلمانوں کی آبادآٹھ اعشاریہ ایک ملین یا مجموعی آبادی کا ایک اعشاریہ دو فیصد تک ہوجائے گی جوموجودہ تعداد کا تقریباً دگنا ہے

امریکی مسلمانوں کی آبادی تیزی سے بڑھ رہی ہے۔سال 2007میں جب پہلی بار امریکی مسلمانوں پرریسرچ کی گئی تو اس وقت امریکا میں تمام عمر کے مسلمانوں کی تعداد پنتیس اعشاریہ دو ملین تھی


نیویارک (خصوصی رپورٹ) مسلمانوں پناہ گزینوں اوران سے متعلق دیگرمسائل پرآج کل سیاسی بحث عروج پرہے اوراس صورتحال میں اکثر لوگوں کے ذہن میں یہ سوال ابھرتا ہے کہ آخر امریکہ میں مسلمانوں کی تعداد ہے کتنی؟بظاہریہ سوال جتنا سادہ ہے اس کا جواب اتنا ہی آسان ہے۔امریکی محکمہ مردم شماری کبھی کسی سے مذہب کے بارے میں سوال نہیں کرتا اوریہی وجہ ہے کہ امریکی مسلمانوں کی تعداد کے حوالے سے سرکاری اعدادوشماردستیاب نہیں۔
امریکی تھنک ٹینک’پیوریسرچ سینٹر‘ کی ریسرچ کے مطابق امریکہ میں رہائش پذیر ہرعمر کے مسلمانوں کی تعداد2017م میں تین اعشاریہ چار پانچ ملین تھی۔امریکہ کی مجموعی آبادی میں مسلمان 1.1فیصدہیں۔
پیوریسرچ سینٹر کے اندازوں کے مطابق امریکہ میں مسلمانوں کی تعداد امریکی یہودیوں سے کم ہے تاہم مسلمانوں کی آبادی میں تیزی سے ہوتے اضافے کودیکھا جائے تو 2040مسلمان ،عیسائیوں کے بعدیہودیوں کی جگہ امریکہ کا دوسرا بڑا مذہبی گروپ بن جائیں گے۔اندازوں کے مطابق2050تک امریکی مسلمانوں کی آبادآٹھ اعشاریہ ایک ملین یا مجموعی آبادی کا ایک اعشاریہ دو فیصد تک ہوجائے گی جوموجودہ تعداد کا تقریباً دگنا ہے۔
امریکہ کے مختلف علاقوں میں مسلمان کی تعداد مختلف ہے۔مثال کے طورپر واشنگٹن ڈی سی میں مسلمان کمیونٹی کی تعداد اچھی خاصی ہے۔اسی طرح دیگرریاستوں مثلا نیوجرسی میں رہنے والے مسلمانوں کی تعداد بھی دویا تین گنا زیادہ ہےلیکن کچھ امریکی ریاستوں میں مسلمانوں کی تعداد نہ ہونے کے برابر ہے۔
امریکی مسلمانوں کی آبادی تیزی سے بڑھ رہی ہے۔سال 2007میں جب پہلی بار امریکی مسلمانوں پرریسرچ کی گئی تو اس وقت امریکا میں تمام عمر کے مسلمانوںکی تعداد پنتیس اعشاریہ دو ملین تھی۔سال 2011میں مسلمانوں کی تعداد بڑھ کر پچھتر اعشاریہ دو ملین ہوگئی۔
مسلمان ا?بادی میں تقریباًایک لاکھ سالانہ کے حساب سے مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ اضافے کا سبب بلند شرح پیدائش اوردیگرملکوں سے مسلمان پناہ گزینوں کی امریکہ آمد ہے۔
امریکی مسلمانوں کی ا?بادی پر تبدیلی مذہب کا کچھ خاص اثرنہیں پڑا۔شاید اس کی وجہ یہ ہے کہ جتنی تعداد میں لوگوں نے اسلام قبول کیا تقریبا ًاتنی ہی تعداد میں لوگوں نے اسلام چھوڑ کردوسرا مذہب اپنا لیا۔
ہرپانچ میں سے ایک امریکی مسلمان مختلف مذہب اورروایات میں پروان چڑھا اورپھربعدمیں اسلام قبول کیا۔بالکل اسی طرح بہت سے امریکی ایسے ہیں جوپہلے مسلمان تھے لیکن اب اسلام سے ان کوکوئی تعلق نہیں۔

تاریخ اشاعت : 2018-01-16 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock