نیویارک میں سانحہ آرمی پبلک سکول پشاور کی پہلی برسی منائی گئی ،سکھی کے زیر اہتمام تقریب میں امریکی قائدین اور عوام کا اظہار یکجہتی


سکھی تنظیم کے زیر انتظام اس خصوصی تقریب کا آغاز ڈائیورسٹی پلازہ پر مستحق افراد میں ایک ہزار فری سردیوں کے کپڑے تقسیم کرکے ، بین العقائد دعائیہ سروس کے انعقاد اور شہید بچوں کی یاد میں شمعیں روشن کرکے کیا گیا


 قونصل جنرل راجہ علی اعجاز، کونسل مین ڈینئل ڈروم، سٹیٹ سینیٹر ٹوبی این سٹا وسکی، سینیٹر ہوزے پرالٹا، قونصل جنرل نیپال نارائم پرساد مینالی، سینٹ پیٹ فار آل کے کو چئیر برینڈن فے سمیت اہم شخصیا ت کی شرکت
 دہشت گردی انسانیت کےلئے ایک ناسور اور لعنت ہے ۔ ہم سب انسانیت کی بنیاد پر اس مشترکہ دشمن سے انسانیت کو نجات دلانے میں اپنا اپنا کردار ادا کرنا ہے، مقررین


نیویارک (خصوصی رپورٹ)نیویارک کے مصروف ترین علاقے جیکسن ہائٹس ، کوینز پر واقع ڈائیورسٹی پلازہ پر سانحہ آرمی پبلک سکول (اے پی ایس )پشاور کی پہلی برسی عقیدت و احترام کے ساتھ منائی گئی۔ سکھی تنظیم کے زیر انتظام منعقدہ اس تقریب میں سکول کے شہید بچوں اور ان کی قربانی کو خراج عقیدت پیش کیا گیا جبکہ اہم امریکی قائدین و مختلف کمیونٹیز اور عقائد سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات اور ارکان کی جانب سے متاثرہ خاندانوں اور پاکستانی عوام کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔


سکھی تنظیم کے زیر انتظام اس خصوصی تقریب کا آغاز ڈائیورسٹی پلازہ پر مستحق افراد میں ایک ہزار فری سردیوں کے کپڑے تقسیم کرکے ، بین العقائد دعائیہ سروس کے انعقاد اور شہید بچوں کی یاد میں شمعیں روشن کرکے کیا گیا۔


برسی کی اس تقریب میں قونصل جنرل پاکستان راجہ علی اعجاز، کونسل مین ڈینئل ڈروم، سٹیٹ سینیٹر ٹوبی این سٹا وسکی، سینیٹر ہوزے پرالٹا، قونصل جنرل نیپال نارائم پرساد مینالی، سینٹ پیٹ فار آل کے کو چئیر برینڈن فے کے علاوہ مسلم ، یہودی ، ہندو، عیسائی ، سکھ سمیت مختلف بین العقائد کمیونٹی قائدین اور مقامی عوام نے بڑی تعداد میں شرکت کی ۔


اس موقع پر ڈائیورسٹی پلازہ پر اے پی ایس سکول کے شہید بچوں سے اظہار یکجہتی کےلئے ایک بڑا بینر آویزاں کیا گیا اور بچوں کی یاد میں پھول رکھے گئے اور شمعیں روشن کی گئیں ۔


سینیٹر ٹوبی این سٹاوسکی نے اے پی ایس سکول کے نام ایک خصوصی فرمان اپنے آفس کی جانب سے سکھی کو پیش کیا جو کہ سکولانتظامیہ کو خصوصی طور پر پہنچایا جائیگا۔سکھی کے بانی آغا صالح نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی انسانیت کےلئے ایک ناسور اور لعنت ہے ۔ ہم سب انسانیت کی بنیاد پر اس مشترکہ دشمن سے انسانیت کو نجات دلانے میں اپنا اپنا کردار ادا کرنا ہے ۔سینیٹر ہوزے پلارٹا نے کہا کہ انتہا پسندی کا کوئی مذہب یا عقیدہ نہیں ہوتا ۔کونسل مین ڈینئیل ڈروم نے کہا کہ میں اے پی ایس سکول کے بچوں کو خراج عقیدت پیش کرتا ہوں اور ان کے لواحقین سے اپنی اور امریکی عوام کی جانب سے مکمل یکجہتی کا اظہار کرتا ہوں ۔


قونصل جنرل راجہ علی اعجاز نے کہا کہ پاکستانی قوم ایک قوم کی حیثیت سے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہراول دستے کا کردار ادا کررہی ہے ۔پاکستان نے اس جنگ میں ہزاروں افراد کی جانوں کا نذرانہ پیش کیا اور ملکی معیشت کو اربوں ڈالرز کا خسارہ برداشت کرنا پڑا ہے۔

 


قونصل جنرل نیپال نارائن پرساد نے کہا کہ اے پی ایس کی پہلی برسی پر اظہار تعزیت کیا، بچوںکی قربانی کو خراج تحسین پیش کیا اور نیپال کے عوام کی جانب سے یکجہتی کا اظہار کیا۔برینڈن فے (آئرش کمیونٹی)، وکٹوریا سٹائین برگ ، ایبی ڈرکر،شاکر کرشینن،امام قیوم ، ٹاو¿ن کلرک نسرین احمد، کمیونٹی لیڈر روحیل ڈار، ہرپیت سنگھ (سکھ کمیونٹی) ، جھلے سنگھ ، پرویز محمود، طاہر میاں، شفقت تنویر، امتیاز چوہدری ، ملک عبدالقدیر، بازہ روحی، نسیم گلگتی ، وسیم سید، سجاد بخاری ، سونی دستگیر، طارق خان ، سلیم ملک ، سہیل شیخ سمیت دیگر اہم کمیونٹی کے مقامی قائدین و اہم شخصیات نے بھی تقریب میں شرکت کی اور اے پی ایس کے شہید بچوں کی لازوال قربانی کو خراج عقیدت پیش کیا ۔


پاکستانی امریکن یوتھ کی جانب سے فاطمہ نے مشہور نظم بلیک ڈے پڑھی ۔ اس موقع پر اے پی ایس سکول کی یاد میں بنایا گیا ترانے کی ویڈیو چلائی گئی ۔ سکھی تنظیم کی چئیرپرسن شازیہ کوثر کی جانب سے تمام مہمانان اور شرکاءکا شکرئیہ ادا کیا گیا۔

تاریخ اشاعت : 2015-12-23 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock