غریبوں کےلئے مفت”ماں ہسپتال“ اس سال مکمل ہو جائیگا ،عمر شریف کا شکاگو میں اعلان

 


شکاگو (خصوصی رپورٹ)عمر شریف فخر پاکستان ہیں اور انہوں نے پاکستان میں ہمارے ضرورت مند بہن بھائیوں کی فلاح و بہبود اور علاج و معالجوں کی سہولت کے لیے ” ماں “ کے نام سے ایک مفت ہسپتال کے قیام کا منصوبہ بنا کر دیا غیر میں رہنے والے ہم پاکستانیوں کا سرفخر سے بلند کردیا ہے۔

 

یہ بات یونس سلیمان یہاں عمر شریف کے ساتھ منعقدہ ایک پروگرام سے خطاب کے دوران کہی ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان سے تشریف لانے والا ہر فنکار دراصل ہمارے ملک کا اثاثہ ہے اور ان کو جتنی بھی قدر کی جائے کم ہے اور عمر شریف نے پاکستان میں مقیم ہمارے ضرورت مند بہن بھائیوں کی فلاح و بہبود اور علاج و معالجوں کا احساس کرکے، دیار غیر میں مقیم ہم پاکستانیوں کا سرفخر سے بلند کردیا ہے۔


 واضح رہے کہ یہ پروگرام بی ایچ ایل یو ایس اے فیملی انٹر ٹینمنٹ کے تعاون سے مقامی ریسٹورنٹ میں منعقد کیا گیا تھا جس میں پاکستانیوں اور ہندوستانیوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔


شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے یونس سلیمان نے اس پروگرام کے اغراض و مقاصد بتاتے ہوئے تمام شرکاءسے اپیل کی کہ کراچی میں زیر تعمیر مفت ہسپتال ” ماں“ تو جلد از جلد پایہ تکمیل تک پہنچانے کے زیادہ سے زیادہ عطیات دیں۔


 عشائیہ کے فوراً بعد عمر شریف نے اپنی بات چیت کے آغاز میں کراچی کی ا یک غریب بستی اورنگی ٹاﺅن میں اپنے ہسپتال تعمیر کرنے کے منصوبہ کا خیال کیسے؟ کب؟ اور اس کی تعمیر میں پاکستان کے اندر اور غیر ممالک میں مقیم پاکستانیوں کے تعاون پر ایک تفصیل اور جامع گفتگو کرتے ہوئے اعلان کیا کہ ” ماں“ ہسپتال (انشاءاللہ تعالیٰ) کا افتتاح عنقریب اس سال ہو جائے گا جس پر شرکاء پر زور تالیوں میں کھڑے ہوکر ان کو داد دی اور خراج تحسین پیش کیا ۔


تقریب میں موجودمتعدد شرکاء نے اپنے مکمل تعاون کا یقین دلاتے ہوئے اپنی اپنی حیثیت کے مطابق موقع پر عطیات بھی پیش کیے۔
 پروگرام کے شرکاءنے جہاں تین گھنٹے سے زائد پروگرام میں عمر شریف کی منفرد اور پرتکلف طنز و مزاح پر قہقہے لگاتے رہے ،وہاں مقامی گلوکار سیف علی اور پرویز اکرام کے خوبصورت گانوں اور موسیقی سے بھی لطف اندوز ہوئے ۔


پروگرام کے آغاز میں یونس سلیمان نے پاکستان کے تشویش ناک حالات اور مسلسل دہشت گردی اور ٹارگٹ کلنگ میں شہید ہونے والے معصوموں اور مکہ مکرمہ میں حالیہ کرین کے حادثہ میں شہیدوں کے شرکاءکے ساتھ ایک منٹ کی مسلسل خاموشی مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے اجتمای دعا کروائی ۔


پروگرام میں شریک دو خواتین نعت خواں محترمہ عائشہ ذیشان اور بیگم سہیل شاکر کے علاوہ آصف احمد نے اپنی نعتیں پیش کرکے لوگوں کے دل جیت لیے اور خوب ادا وصول کی۔


آخر میں شرکاءنے منتظمین کو ہسپتال کی مد میں اپنے عطیات لکھوائے اور عمر شریف اور ان کی اہلیہ کے ساتھ فراہم کردہ تصویر کھنچوانے کے موقع پر خوب تصویریں اتروائیں۔


تاریخ اشاعت : 2015-09-16 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock