اختر ظہیراحمد مہر کمشنر برائے پرائم منسٹر کوارڈی نیٹر فار اوورسیز پاکستانیزکا کوارڈی نیٹر مقرر، کمیونٹی کا تقرری کا خیر مقدم، زبیر گل کا شکرئیہ

 

تقریب میں پاکستان لیگ یو ایس اے کے صدر ظفر سپرا، پاکولی کے بانی بشیر قمر، پاکولی کے صدر سلمان شیخ، ہمایوں شبیر ، پاکونی کے بانی طاہر میاں ،بروکلین میلہ کے رہنما چوہدری اسلم ڈھلوں،جنرل سیکرٹری پانی صالح سمیع، نوید شہزاد (وائس پریذیڈنٹ پانی) ، نعیم ملک (اوورسیز پاکستانی برطانیہ) ،سلیم احمد ملک (سینئر ٹی وی اینکر و سکالر)، وسیم سید (پاکونی ) ، سرور چوہدری (پیپلز پارٹی)، سیمی اسد (پیپلز پارٹی) ، فرح ملک (نیوجرسی ) ، وکیل انصاری (سینئر کالم نویس و سکالر)، چوہدری نوید انور پلاں گراں (ویسٹ چیسٹر ، نیویارک) ، HRCOPکے قائدین چئیرمین کوثر شاہ ، سینئر وائس چئیرمین فاروق ڈار، وائس چیئرمین مجیب لودھی ،پریذیڈنٹ علمدار شاہ بخاری ، ممبر بورڈ آف ٹرسیٹز نثار بھٹہ، سنی نقوی، طاہرہ دین (کمیونٹی رہنما ) ، خواجہ فاروق ، نیاز جوئیہ ، ارشد چوہدری و دیگر کمیونٹی کی اہم شخصیات شریک ہوئیں ۔


نیویارک( خصوصی رپورٹ) نیویارک کی معروف سماجی شخصیت اورپاکستانی امریکنز آف نیویارک " پانی" کےچئیرمین اختر ظہیر مہر کوفیڈرل کمشنر برائے پرائم منسٹر کوارڈی نیٹر برائے اوورسیز پاکستانیزکا کوارڈی نیٹر مقرر کر دیا گیا ہے ۔ ان کی تقرری کا نوٹیفکیشن کمشنر برائے پرائم منسٹر کوارڈی نیٹر برائے اوورسیز پاکستانیز زبیر گل کی جانب سے جاری کیا گیا ہے ۔ ان کا عہدہ (assistance provider)کا ہوگا ۔ اختر ظہیر مہر کی تقرری کی خوشی میں اور کمشنر برائے پرائم منسٹر کوارڈی نیٹر برائے اوورسیز پاکستانیز کے اس اقدام کے خیر مقدم کے لئے گذشتہ ہفتے یہاں ہیومین رائٹس کونسل نیویارک کے زیر اہتمام خصوصی تقریب منعقد ہوئی جس میں انہیں کونسل کے عہدیداران اور کمیونٹی کی مقامی اہم شخصیات و ارکان کی جانب سے مبارکباد دی گئی، ان کےلئے پرخلوص تمناو¿ں کا اظہار کیا گیا جبکہ اختر ظہیر مہر نے کہا کہ وہ امریکہ کی اوورسیز کمیونٹی کے فیڈرل کمشنر برائے پرائم منسٹر کوارڈی نیٹر برائے اوورسیز پاکستانیز کی سطح پر مسائل کے حل میں اپنا ہر ممکن کردار ادا کرنے میں کوئی کسر نہیں اٹھا رکھیں گے ۔


 تقریب میں سلیم ملک نے اسٹیج سکرٹیری کے فرائض سرانجام دیے۔انسانی حقوق کونسل کے چیئرمین سید عملدار حسین بخاری نے اس موقع پر کہا کہ گزشتہ سال یہاں پر ہی کمیونٹی کے بہترین لوگوں سے ملاقات ہوئی، ہیومین رائٹس کمیشن کی بنیاد گزشتہ سال رکھنے کی وجہ کمیونٹی کے مسائل کے حل کے لیے مناسب فورم تشکیل دینا تھا، ہم نے کوئی فیس نہ رکھی اور تمام لوگوں کو خوش آمدید کہا۔ اس تنظیم کے وائس چیئرمین مجیب لودھی اور سنیئر وائس چیئرمین فاروق ڈار نے قابل قدر کام کیا جبکہ بورڈ آف ٹرسیٹز سید قیصر شاہ، نثار بھٹہ، ظہیر مہر، سنی نقوی، چوہدری آصف بورڈ ممبر، چوہدری سرور، فرح ملک سمیت کئی لوگوں کی کاوشوں نے ہمیں کامیابیوں سے ہمکنار کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم تمام اچھے افراد کو یہاں اس فورم میں خوش آمدید کہیں گئے، یہ غیر سیاسی اور فلاحی تنظیم ہے۔ ہم اس کو ایسا بنانا چاہتے ہیں کہ صرف عہدے تقسیم نہ ہوں بلکہ عملی کام کیا جائے۔

 

 

ظہیر مہر کو وزیر اعظم سیکرٹیریٹ کی طرف سے نامزدگی کرنے پرمبارک باد دیتے ہیں اور امید کرتے ہیں کہ ظہیر مہر اورسیز پاکستانیوں کی فلاح و بہبود کیلئے جو ممکن کوسکا اپنا کردار ادا کریں گئے۔ اس موقع پر سید علمدار شاہ نے لانگ آئی لینڈ مسجد میں چوری کی واردات ناکام بنانے پر مجیب لودھی کو خراج تحسین پیش کیا۔
سماجی تنظیم پاکولی کے رہنما قمر بشیر نے ظہیر مہر کو نامزدگی پر مبارک دی اور نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ طاہر میاں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امید ہے ظہیر مہر اپنے فرائض سرانجام بہترین انداز میں اٹھائیں گئے اور کمیونٹی کی بہتری کے لیے مثالی کام کریں گے۔ ہم ان کو مبارکباد دیں گے۔

 

پاکستان پپپلز پارٹی کے رہنما سرور چوہدری نے کہا کہ ظہیر مہر کو مبارک دیتا ہوں اور یہ سمندر پار پاکستانیوں کی بڑی کامیابی ہے اور ہم نے محترمہ سے درخواست کی کہ ایوان میں بھی سمندر پار پاکستانیوں کی نششتوں کو ہونا چاہیے اور اس سلسلے میں تمام سیاسی جماعتوں سے بات کی۔ خوشی کی بات ہے مسلم لیگ ن نے سمندر پار پاکستانیوں کو اہمیت دینا شروع کیا ہے۔ کپیٹن شاہین اور زبیر گل کی نامزدگیاں اس سلسلے کا آغاز ہیں۔ سمندر پار پاکستانیوں کو ووٹ کا حق بھی دیا جانا چاہیے۔ مگر افسوس کہ ووٹنگ حق دینے کا معاملہ سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری نے بھی اس معاملے کو رد کر دیا۔


کمیونٹی اورپاکستان لیگ آف یو ایس اے کے رہنما ظفر سپرا نے ظہیر مہر کو مبارک دیتے ہوئے کہا کہ ہم سب کو اپنی کمیونٹی اور سمندر پار پاکستانیوں کے کیے جو کچھ کرسکتے ہیں کرنا چاہیے اور ایسے قدامات وقت کی ضرورت ہے۔ بروکلین کے کمیونٹی رہنما اسلم ڈھلوں نے کہا کہ ظہیر مہر غیر سیاسی شخصیت ہیں اور انسانی حقوق کونسل نے انتہائی مثبت فیصلہ کیا ہے۔

 

سنیئر وائس چیئرمین انسانی حقوق کونسل فاروق ڈار نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ظہیر مہر کومبارکباد دیتا ہوں اور تمام نئے ممبران کو بھی خوش امدید کہتے ہیں۔ ہماری تنظیم غیر سیاسی ہے اور اس میں ہم تمام لوگوں کو خوش آمدید کہتے ہیں۔خاتون ایکٹیوسٹ مس طاہرہ نے کہا کہ ظہیر مہر کو مبارک دیتے ہیں، ماضی میں بھی انہوں نے اچھے کام کیے اور مستقبل میں بھی امید ہے روایت کو برقرار رکھیں گے۔ فرح ملک نے کہا کہ جس ذمہ داری کے لیے اختر ظہیر مہر کو منتخب کیا گیا ہے وہ یقینا احسن طریقے سے ادا کریں گے۔ سنی نقوی کے کہا کہ ہمار بھرپور تعاون ظہیر مہر کے ساتھ رہے گا۔


 سیمی اسد نے کہا کہ ظہیر مہر کمیونٹی کی تمام ایکٹیویٹز میں سرگرم نظر آتے ہیں اور ہم سمجھتے ہیں کہ ان کا انتخاب بہترین ہے اور بہتر کام کریں۔ نوید شہزاد نے کہا کہ نامزدگی ہمارے لیے فخر کی بات ہے اور پانی کے لیے بھی اعزاز کی بات ہے۔


 وائس چیئرمین مجیب لودھی وائس نے کہا کہ ایک سال قبل عملدار شاہ صاحب کی سربراہی میں یہ تنظیم قائم کی گئی اور آج کی تقرری اس کا بہترین حصول ہے۔ ہم نے تنقید کو نظر انداز کرتے ہوئے اپنا کام جاری رکھا اور حکومت پاکستان نے ہمارے کام کو سراہتے ہوئے ظہیر مہر کو نامزد کیا تاکہ وہ نارتھ امریکہ میں کمیونٹی کے مسائل حل کریں۔ سات یا آٹھ ممبرز سے شروع ہونے والی تنظیم کے آج پیچیس ممبر ہیں جس کا کریڈٹ علمدار شاہ صاحب کو جاتا ہے۔


وکیل انصاری نے کہا کہ ظہیر مہر کمیونٹی کے مخلص آدمی ہیں۔ ہماری نمائندگی بہت ضروری ہے اور پاکستان جا کر ہمیں شدید سے احساس ہوتا ہے کہ ہمارے ملک میں ہی ہمارا کوئی وجود نہیں۔ چین کی ترقی میں سمندر پار شہریوں نے اہم کردار ادا کیا۔ امید ہے ظہیر مہر اس نمائندگی کو ضروری بنانے کے لیے اپنا کردار ادا کریں گے۔


 کمیونٹی رہنما قمر بشیر نے کہا پاکستانی امریکن کو اس کامیابی پر مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ یہ پہلی تقریب دیکھی ہے جس میں کسی شخص کو ذمہ داری لاد دی جائے اور وہ خوش ہو۔ جب ہم اورسیز کی بات کرتے ہیں تو مسائل کا ایک ڈھیر لا کر میز پر رکھ دیا جاتا ہے، کسی کی زمین پر قبضے یا کسی کو ویزہ کا مسئلہ ہے۔ پاکستان میں بدقسمتی سے نظام ایسا ہے جہاں اقرپروری کا راج ہے۔ یہ ایک مشکل کام ہے کہ ہر شخص کو فوری انصاف مل جائے، ہمارے مکانات پر قبضہ ہوجاتا ہے۔

 

پاکستان میں سکرٹیریٹ میں ہزاروں درخواستیں زیر التوا ہے۔ اگر درخواست کی باری آ بھی جائے تو پتہ چلتا ہے کہ وہ حکومتی آدمی ہے۔ ان ضرورت ہے کہ کمیونٹی ظہیر مہر کی بھر پور سپورٹ کرے، ہمیں ظہیر مہر کی نیت پر کوئی شک نہیں مگر پاکستان میں صاحب اقتدار افراد کی ترجیحات اور ہیں۔ پاکستان سے آنے والے وفود سے اورسیز پاکستانی بن کر بات کریں، کمیونٹی کے مسائل کے حل کے لیے ہمیں کوشش کرتے رہنا چاہیے۔ چیئرمین سید کوثر شاہ نے کہا کہ ہم کو دل سے ظہیر مہر کی سپورٹ کرنا ہےاس فورم کو پروان چڑھائیں گے۔

 


نعیم ملک نے ظہیر مہر کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرواتے ہیں۔اس موقع پر ظہیر مہر نے ہیومین رائٹس کمیشن کے تمام ممبران کا شکریہ ادا کیا جبکہ تنظیم کی طرف سے مجیب لودھی کو پھولوں کا گلدستہ پیش کیا گیا۔

 

شرکا نے کہا کہ مجیب لودھی نے کمیونٹی کو نئی راہ دیکھائی اور جو ہمت دیکھائی وہ قابل تحسین ہے۔ ہیومین رائٹس کمیشن کی طرف سےظہیر مہر کو بھی خصوصی شکیڈ پیش کی گئی۔ اختر ظہیر مہر نے تمام دوستوں کی نیک خواہشات پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ زبیر گل کا مشکور ہوں جنہوں نے مقامی کمیونٹی کو سپورٹ کرتے ہوئے نامزدگی کروائی، یہ میری فتح نہیں آپ سب کی فتح ہے۔ آپ سب لوگوں کی محنتوں کا صلہ ہے کہ ہمیں مانا گیا۔ حقیقی سفیر وہ لوگ ہیں جنہوں نے دیار غیر میں کمیونٹی کے لیے کام کیا۔ ہم نے زور دیا گیا کہ مقامی کمیونٹی سے نامزد کریں تاکہ لوگوں کے مسائل حقیقی طور پر سمجھے۔ پاکستان سے نامزد ہونے والا شخص ان مسائل کا حل نہیں سمجھ سکتا۔ امید ہے مستقبل میں بھی آپ لوگ کا ساتھ ساتھ رہے گا۔


مجھے جو رہنمائی ملے گئی، اس کے مطابق کام کرتا رہوں گا اور اس آفس تک آپ کی شکایات بنانا ہے۔ میرا کسی سیاسی جماعت سے تعلق نہیں اور نہ ہی کوئی اثرورسوخ والا خاندان ہے کہ پاکستان جا کر آپ کا کام کر سکوںپہلے حکومتی ایوانواں میں ہماری شنوائی بھی نہیں تھی مگر اب آپ لوگوں کی نمائندگی ہے امید ہے کہ مستقبل میں یہ عہدہ کمیونٹی کے پاس رہے گا۔ حکومت نے مقامی کمیونٹی کو موقع دیا کہ ہم اپنے مسائل ان تک پہنچا سکیں۔ پاکستان میں بڑے بڑے رہنما حکومتی ایوانوں میں آئے مگر کسی نے کوئی سپورٹ نہیں کی۔ وزیر اعظم آفس میں ایک ادارہ بھی قائم ہوا ہے جو آپ کی پاکستان میں سرمایہ کاری کو تحفظ دے گا
.

 

تاریخ اشاعت : 2017-09-02 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock