میں پاکستان کو ایف سولہ طیارے دلوائے نہ کہ رکوائے، حسین حقانی کا خواجہ آصف کے بیان پر ردعمل

 

وزیر دفاع کو معلوم ہونا چاہئیے کہ میں امریکہ میں ایک استاد کی حیثیت سے پڑھاتا ہوں نہ کہ کوئی لابئیسٹ کا کام کررہا ہوں

نیویارک (سپیشل رپورٹر سے ) امریکہ میں پاکستان کے سابق سفیر حسین حقانی نے وزیر دفاع پاکستان خواجہ آصف کی جانب سے عائد کردہ اس الزام کہ وہ پاکستان کے ایف سولہ طیاروں کی فراہمی کو روکنے کے لئے لابی کررہے ہیں، کی نہ صرف تردید کی ہے بلکہ وزیر دفاع کے بیان میں اپنا مفصل بیان جاری کیا ہے ۔


اپنے بیان میں حسین حقانی نے کہا کہ جب سے میں نے سفیر کا عہدہ چھوڑا ہے ، میں نے کسی کے لئے لابی اور نہ ہی کسی چیر کے لئے لابی کی ہے ۔تاریخ ثابت کرے گی کہ جب میں سفیر تھا تو پاکستان ائیر فورس کو 12ایف سولہ طیارے امریکہ سے ملے تھے ۔انہوں نے کہا کہ میں نے کانگریس کی مخالفت کے بغیر نہ صرف طیاروں کے حصول کو یقنی بنایا بلکہ ایف سولہ طیاروں کی ڈیل میں حائل سیاسی رکاوٹوں کو دور کرنے میں بھی اپنا کردار ادا کیا اور ائیر فورس کی جانب سے اس کردار کو سراہا گیا۔


انہوں نے کہا کہ یہ ایک مضحکہ خیز بات ہے کہ ایک سابق سفیر پاکستان اور امریکہ کے درمیان کسی ملٹری ڈیل کو رکواسکتا ہے ۔


حسین حقانی نے کہا کہ وزیر دفاع کو معلوم ہونا چاہئیے کہ میں امریکہ میں ایک استاد کی حیثیت سے پڑھاتا ہوں نہ کہ کوئی لابئیسٹ کا کام کررہا ہوں ۔انہوں نے کہا کہ میرے ہی دور میں امریکی کانگریس نے پاکستان کے لئے کیری لوگر بل کی شکل میں پاکستان کے لئے سب سے بڑی امداد7.5ارب ڈالرز کا پیکج منظور کیا تھا۔


تاریخ اشاعت : 2016-01-19 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock