سعودی عرب میں حکام مستقبل قریب میں غیر ملکی سرمایہ کاروں اور ماہرین کو جاری کرنے والے ” گرین کارڈز “ کا جائزہ لے رہے ہیں اور اگر اس کو منظور کر لیا جاتا ہے تو اس کا بہت جلد اعلان کردیا جائے گا۔ سعودی ذرائع ابلاغ  

سعودی عرب میں حکام مستقبل قریب میں غیر ملکی سرمایہ کاروں اور ماہرین کو جاری کرنے والے ” گرین کارڈز “ کا جائزہ لے رہے ہیں اور اگر اس کو منظور کر لیا جاتا ہے تو اس کا بہت جلد اعلان کردیا جائے گا۔ سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ بات اقتصادی امور اور ترقی کونسل کے مقامی کانٹینٹ اور پرائیویٹ سیکٹر ڈیولپمنٹ یونٹ کے سربراہ فہد السکیت نے ایک بیان میں بتائی ہے۔ سعودی عرب کی شوریٰ کونسل کی مالیاتی کمیٹی کے وائس چیئرمین فہد بن نے بھی غیرملکی سرمایہ کاروں کے لیے ان کارڈوں کی تصدیق کی ہے۔

 

انھوں نے بتایا کہ سعودی گرین کارڈ کی اہلیت کا معیار تجارت اور سرمایہ کاری کی وزارت اور دوسرے ادارے مل کر طے کریں گے۔ فہد السکیت کا کہنا ہے کہ گرین کارڈ کی اہلیت کے معیار پر پورا اترنے کے لیے ضروری ہے کہ درخواست گزار سائنسی مہارتوں کے حامل ہوں یا پیشہ ورانہ قابلیت رکھتے ہوں یا پھر وہ کسی کمپنی کے مالکان ہوں اور سعودی عرب میں سرمایہ کاری کرنے کا ارادہ رکھتے ہوں۔

 

انھوں نے بتایا ہے کہ یہ گرین کارڈ محدود تعداد میں دستیاب ہوں گے ، درخواست گزاروں کو مذکورہ معیار پر پورا اترنا ہوگا اور دوسرا مملکت میں کاروبار کے خواہاں غیر ملکی سعودی انویسٹمنٹ لائسنس بھی حاصل کرسکیں گے۔

تاریخ اشاعت : 2017-12-21 00:00:00
مقبول ترین خبریں
امیگریشن خبریں
SiteLock